14

بی جے پی کے پاس ملک کیلئے منشور ہے نہ دستور العمل :طارق انور

راجستھان : کانگریس پارٹی کے سینئر لیڈر اور سابق مرکزی وزیر طارق انور نے راجستھان کے جودھپور اور پالی میں کانگریس پارٹی کے امیدواروں کے لئے آج لوگوں سے ووٹ مانگا۔ انہوں نے الگ الگ انتخابی ریلیوں سے خطاب کرتے ہوئے بھارتیہ جنتا پارٹی کی بانٹو اور راج کرو کی پالیسی پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہاکہ بی جے پی مندر مندر کرکے ملک کے پرامن ماحول کو تباہ کرنے پر آمادہ ہے ۔
طارق انور نے کہاکہ بھارتیہ جنتاپارٹی نفرت کی سیاست کرکے لوگوں کو الجھا کر ترقی سے انہیں دور رکھنا چاہتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ شائننگ انڈیا اور سب کا ساتھ سب کا وکاس کا نعرہ دینے والے لوگ جب کچھ نہیں کرپائے تو لوگوں کے جذبات سے کھیلنے لگے۔
انہوںںے کہاکہ آزاد ہندوستان کی تاریخ میں شاید یہ پہلی بار ہوا ہوگا کہ جب راجستھان کے نوجوان بیروزگاری کی وجہ سے خود کشی کرنے کے لیے مجبور ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ اسمبلی انتخابات نہ صرف راجستھان بلکہ پورے ملک کی قسمت بدلنے کا کام کریں گے اس لئے لوگوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ کانگریس پارٹی کے امیدواروں کو بڑی اکثریت سے کامیاب بنائے ۔
طارق انور نے کہاکہ لوگوں کو یہ فیصلہ کرنا ہوگا کہ وہ جن کے ہاتھوں میں اپنے بچوں کا مستقبل نہیں دے سکتے ان کے ہاتھوں میں ملک کا مستقبل کیسے انہوں نے دے دیا ۔ انہوں کے کہاکہ خوشی ہے کہ لوگ 2014 کے مکر کو پہچان چکے ہیں اور اب اپنی باری کاانہیں بے صبری سے انتظار ہے ۔انہوں نے کہا کہ جس طرح سے دیش کے کسانوں نوجوانوں اورعورتوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے اور ان کی توہین کی جارہی ہے اس سے صاف ظاہر ہے کہ بی جے پی کے من میں کسی کیلئے موہ نہیں ہے ۔
طارق انور نے مزید کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی نے اقتدار میں آنے سے قبل کسانوں کو ان کی فصل کی دوگنی رقم دینے کا وعدہ کیا تھا لیکن آج راجستھان کی صورتحال یہ ہے کہ بہت سے علاقے سوکھے کی مار جھیل رہے ہیں اور کئی علاقوں میں سوکھے کا اعلان بھی کردیا گیا ہے ۔ایک طرف بی جے پی کسانوں اور نوجوانوں کی ہمدردی کا دعوی کرتی ہے دوسری طرف وہ کسانوں اور جوانوں کو آمنے سامنے کھڑا کرکے ان پر لاٹھیاں اور آنسو گیس کے گولے برسوا رہی ہے اور نوجوانوں کو پکوڑا بیچنے کا مشورہ دے رہی ہے۔
انہوں نے کہا کہ اس کے پاس ملک کے لئے نہ کوئی منشور ہے نہ کوئی دستور العمل اور نہ ہی انھوں نے ملک کی خاطر کبھی کوئی قربانی دی ہے جبکہ کانگریس پارٹی کی تاریخ قربانی سے عبارت رہی ہے اس لئے لوگوں کو بھی اب یہ سمجھ میں آ گیا ہے کہ کانگریس ہی ایک ایسی پارٹی ہے جو ملک کو ایک مستقل اور خوشحال سرکار دے سکتی ہے، جس میں معیشت برق رفتاری کے ساتھ ترقی کرے اور سب کو مکمل ترقی کے مواقع میسر ہوں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں