11

نصیر الدین شاہ کی تشویش ہرہندوستانی کی تشویش:سرفراز

نئی دہلی: فلم اداکار نصیر الدین شاہ کا دفاع اور بلندشہر کے انسپکٹرسبود ھ کمار کے قاتلوں کی گرفتاری نہ ہونے کی مذمت کرتے ہوئے دہلی کانگریس کمیٹی کے سکریٹری اور سپریم کورٹ کے وکیل سرفراز احمد صدیقی نے کہاکہ اظہار آزاد ی کا دفاع اور ظالموں کے خلاف کے ہر حال میں کارروائی ہونی چاہئے۔

انہوں نے کہاکہ نصیر الدین شاہ نے کوئی غلط نہیں کہا ہے اور انہوں نے انسپکٹر سبودھ کمار کے قاتلوں کی گرفتاری نہ ہونے پر اعتراض کیا ہے اور کہا ہے کہ انسپکٹر سبودھ کمار سے زیادہ گائے کی جان کی قیمت ہوگئی ہے اور یہ ملک کے لئے اچھا نہیں ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ڈر نہیں بلکہ صورت حال پر غصہ آتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس صورت حال پر ہر ہندوستانی کو غصہ آئے گا اور نصیر الدین شاہ نے اسی غصے کا اظہار کیا ہے۔

انہوں نے بی جے پی کے وزرائے اور لیڈروں کی اس معاملے پر بیان بازی کی مذمت کرتے ہوئے کہاکہ بی جے پی کے وزرائے نصیر الدین شاہ کے بیان پر ردعمل ظاہر کرنے سے قبل اس کو پڑھ لینا چاہئے تھا۔ انہوں نے کہاکہ جس طرح ملک میں گائے نام پر سڑکوں پر ہنگامہ اور قتل کیا جارہاہے اس سے ملک کی بدنامی ہورہی ہے اور دوسرے ممالک میں ہندوستان کی ساکھ خراب ہورہی ہے جو ہر ہندوستانی کے لئے تشویش کا باث ہونا چاہئے۔

مسٹر صدیقی نے کہاکہ سول سوسائٹی کو اس معاملے میں آگے آکر ان لوگوں کو سخت جواب دینا چاہئے جو اظہار آزادی پر حملہ کر رہے ہیں اور عدم برداشت کو بڑھاوا دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ انسان کی جان ہر حال میں قیمتی ہے اور اس کے بارے میں اانسانیت میں یقین رکھنے والوں کی ایک رائے ہونی چاہئے اور نصیر الدین شاہ انسپکٹر سبودھ کمار کے حق میں بیان دے کر کوئی غلط نہیں کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں